جہلم: اندرون شہر کے بیشتر مقامات پر غیر قانونی مویشیاں منڈیاں قائم

جہلم: اندرون شہر کے بیشتر مقامات پر غیر قانونی مویشیاں منڈیاں قائم

جہلم(چوہدری عابد محمود+مرزا قدیر بیگ ) حکومت پنجاب کی چشم پوشی اور ضلع کونسل کی عدم توجہی،اندرون شہر کے بیشتر مقامات پر غیر قانونی مویشیاں منڈیاں قائم،عید قربان قریب آنے کے باوجود سرکاری منڈیوں کی نشاندہی نہ ہو سکی ،بیوپاری قربانی کے جانور گلی گلی لیکر گھومنے لگے ۔تفصیلات کیمطابق حکومت پنجاب کی چشم پوشی اور ضلع کونسل جہلم کی عدم توجہی کے باعث پابندی کے باوجود شہر کے بیشتر مقامات پر چھوٹی چھوٹی منڈیاں سج گئی ہیں جہاں پر جانوروں کی خریدوفروخت کا سلسلہ جاری ہے بیوپاری شہریوں کو لاغر اور نقائص والے جانور فروخت کر رہے ہیں اور اس سلسلہ میں کوئی روکنے ٹوکنے والا نہیں ،شہر کے جن علاقوں میں غیر قانونی منڈیاں قائم کی گئی ہیں ان میں سول ہسپتال روڈ،میجر اکرم شہید روڈ،بلال ٹاؤن ،کالاگوجراں ،چونترہ کھرالہ روڈ،کچہری روڈ سمیت دیگر درجنوں علاقے شامل ہیں ان غیر قانونی منڈیوں میں جانوروں کا فضلہ اور گندگی سے طرح طرح کی بیماریاں پھیلنے کا بھی خدشہ لاحق ہے ،غیر قانونی منڈیوں کے علاوہ پورے شہر میں گلی محلوں میں بھی بیوپاری قربانی کے جانور لیکر آزادانہ گھومتے دکھائی دیتے ہیں غیرقانونی منڈیوں میں ڈینگی وائرس سے بچاؤ کا اسپرے بھی نہیں کیا گیا ،بیوپاریوں کاا س حوالے سے کہنا ہے کہ سرکاری منڈیوں میں ابھی تک کسی قسم کے انتظامات ہی نہیں کیے گئے ایسی جگہوں پر جانور لیکر کس طرح جائیں ،قربانی کے جانوروں کو منڈی میں لیکر جانا اور وہاں کے ٹیکس ادا کرنا انتہائی مشکل کام ہے ،دوسری طرف شہریوں کا کہنا ہے کہ بیوپاریوں نے جانوروں کی قیمتوں میں ہوشر باء اضافہ کر رکھا ہے پنجاب حکومت اور ضلعی حکومت کو چاہیے کہ اس سلسلے میں اقدامات اُٹھائے تاکہ شہری سنت ابراہیمی ادا کر سکیں